9

فریدون تنولی پر درج بوگس پرچہ کیس بے نقاب

مانسہرہ۔ سماجی شخصيت فریدون تنولی پر درج بوگس پرچہ کیس بے نقاب ایس ایچ او تھانہ سٹی صداقت نثار ریوو گاڑی ہضم کرانے میں فرنٹ مین نکلا سپرداری میں لگاۓ گٸے شناختی کارڈ والے تینوں افراد نے عدلیہ اور میڈیا کے سامنے پول کھول دیا میں معزز عدلیہ اور اعلئ انتظامی حکام سے ظالموں کے خلاف کارواٸی اور انصاف کا مطالبہ کرتا ہوں۔

فریدون تنولی. گزشتہ روز سماجی و سیاسی شخصيت فریدون تنولی نے اپنے اوپر ہونے والے بوگس اور ذاتی خریدی گٸی ملکیتی ریوو گاڑی نمبرAQ107کی تھانہ سٹی سے بوگس طریقے سے کی گٸی سپرداری کی تحقیقات کے بعد سپرداری مں بطور ضمانت و گواہ بننے والے افراد منور خان ولد حاکم خان سکنہ جھامرہ سوسل

ساجد ولدمحمد فاروق اور حیدر زمان ولد محمد یعقوب ساکنان سوسل مانسہرہ نے ھنگامی پریس بریفگ دیتے ہوۓ کہا کہ ہمارے شناختی کارڈ کی کاپیاں جس ریوو گاڑی نمبرAQ107 کی سپرداری کی ضمانت و گواہی کے لٸے لگا کر طارق خان ولد شوکت علی سکنہ اقبال پارک لاہور کو سپردرای کر کے حوالے کی گٸی واضح رہے کہ ہم نہ کسی طارق لاہور والے کو جانتے ہیں ۔

جسے گاڑی حوالے کی گئی اور نہ ہی اس حوالہ سے کسی عدالت یا تھانہ میں ضمانت یا گواہی دی ہے اس مقدمہ سے ہمارا کوٸی تعلق نہیں اور نہ ہی علم ہے مذکورہ بالا ضمانتی و گواہان نے عدالتی بیان دینے کے بعد میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہماری شناختی کارڈ کاپیاں جو کے ہم نے تقریبا8/9ماہ قبل اپنے بھاٸی کی ضمانت کے سلسلے میں جمع کرواٸی تھیں۔

وہ شناختی کارڈ کاپیاں ایس ایچ او تھانہ سٹی صداقت نثار نےمبینہ طور پر ملی بھگت سے مزکورہ بالا ریوو گاڑی سپرداری میں بوگس طریقے سے بطور ضمانتی و گواہ استعمال کیں جو کہ سراسر غلط جھوٹ اور فراڈ پر مبنی ہے۔

اور ہمارے جعلی دستخط کئے گئے مچلکے ضمانت بابت گاڑی جعلی طریقے سے استعمال کٸے گٸے جو کہ سراسر جعلی و فرضی ہیں اور ہمارا اس سے کوٸی تعلق نہیں ہے. اس موقع سیاسی و سماجی شخصیت فریدون تنولی نے کہا کہ میرے خلاف کی گٸی سازش خدا کے فضل و کرم سے بے نقاب ہوٸی اور خدا نے مجھے سرخرو کیا کیوں کہ میں حق پر تھا ۔

گاڑی تین سال قبل خریدی اور گزشتہ تین سال سے میرے استعمال میں تھی ایس ایچ او سٹی صداقت نثار نے مبینہ اجرتی قاتل کا کردار ادا کرنے کی بھر پور سازش رچاٸی لیکن خدا نے بے نقاب کیا اس سازش میں ایس ایچ او صداقت نثار اور اسکا بھائی جانثار اور زاھد اسلم جیولر ملوث ہیں زاھد اسلم جیولر مبینہ طور پر حساس اداروں کا نام استعمال کر کے اپنے مزموم مقاصد پورے کرتا ہے ۔

تینوں بھاٸی ایک تھانہ میں تعینات ہیں اور ان پرمنشیات فروش اور و جیب کتروں ودیگر وارداتوں میں ملوث جراٸم پیشہ افراد کی پشت پناہی کا الزام بھی. تھانہ سٹی کا نام تبدیل کر کے تھانہ موڑ بفہ رکھا جائے کیونکہ اس میں ایس ایچ کے بھائیوں سمیت دیگر رشتہ دار برادری کے لوگ جمع ھو گئے ھیں. جو کہ اپنے مذموم مقاصد پورے کرنے اور اپنی پراپرٹی بنانے میں مبینہ طور پر مصروف عمل ھیں.

اگر تحقیقاتی ادارے اور ذمہ داران غیرجانبدارانہ انکوائری کریں تو اصل حقائق بمعہ ثبوت سامنے آجاٸیں گے اگر مزکورہ کیس میں مجھے انصاف نہ ملا تو اپنے علاقہ تناول اور مانسہرہ کی غیرت مند اور مظلوم عوام کے ہمراہ بھر پور احتجاج کریں گے

اور تمام تر حالات کی ذمہ داری ایس ایچ او سٹی صداقت نثار،جانثار أور زاھد اسلم جیولر پر عاٸد ہوگی مجھے معزز عدلیہ سے جسطرح پہلے بھر پور انصاف ملا اب بھی بھر پور انصاف کی امید و توقع ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں