12

صحافی نعیم ساغر پر گھر میں گھس کر قاتلانہ حملہ اور سرعام با مسلع ڈکیتی

مانسہرہ ۔ نوجوان صحافی و ممبر ایم یو جے محمد نعیم ساغر پر گھر میں گھس کر قاتلانہ حملہ اور سرعام با مسلع ڈکیتی کی مزمت کرتے ہیں ضلع انتظامیہ کو مقدمہ اندراج اور ملزمان کی گرفتاری کے لئے اتوار تک ڈیڈ لائن دے دی بھرپور احتجاج کی تیاریاں شرو ع

صحافی برادری کا ہنگامی اجلاس منعقد ہوا جس میں پریس کلب و ایم یو جے و دیگر ضلع بھر کی صحافتی تنظیمات کے نمائندہ گان نے شرکت کی اس موقع پر انہوں نے ممبر مانسہرہ یونین اف جرنلیسٹ و نوجوان صحافی محمد نعیم پر دن دہاڑے ان کے گھر میں گھس کر 15سے زائد بامسلع افراد کی جانب سے قاتلانہ حملے میں زخمی کرنےکے ساتھ گھر سے لاکھوں روپے نقدی طلائی زیورات لے گئے۔

انہوں نے کہا کہ معاشرے کی عکاسی کرنے اور قانون کی بالا دستی قائم رکھنے کے لئے صحافی برادری نے ہر اول دستے کا کردار ادا کیا ہے اج با مسلع غنڈوں کا حملہ صحافی محمد نعیم پر نہیں صحافی برادری پر حملہ ہے جس کی ہم پر زور مزمت کرتے ہیں۔

اور ضلعی پولیس انتظامیہ تھانہ سٹی اور لاری اڈہ چوکی سٹاف مزکورہ واقع کی تحقیقات کر کے زخمی صحافی محمد نعیم پر قاتلانہ حملے اور نقدی و زیورات لوٹنے والے چادر و چار دیواری کا تقدس پامال کرنے سمیت قاتلانہ حملے و ڈکیتی کی دفعات کا اندراج کر کے مقدمہ درج کیا جائے۔

نامزد ملزمان کو گرفتار کر کے لوٹی ہوئی رقم و زیوارات واپس کرا کر قرار واقع سزا دی جائے جملہ صحافی برادری نے اتوار شام تک واقع کے فوری ازالے کا مطالبہ کیا ہے بصورت دیگر سوار کے روز اجلاس طلب کر کے ضلع بھر میں احتجاجی مظاھروں کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں