5

بابوشیرازقریشی بااخلاق، باکردار ،شریف النفس،خوش مزاج اور ملنسار انسان تھے، قاضی اسرائیل گڑنگی

مانسہرہ . بابوشیرازقریشی کے انتقال کا غم تادیر باقی رہے گا۔ ان کے اچانک اٹھ جانے سے ان کے اہل خانہ کے ساتھ ساتھ ضلع مانسہرہ میں غم کا ماحول برپا ہے۔ ان کے انتقال سے جو صدمہ پہنچاہے .

وہ بیان سے باہر ہے۔ ان کی رحلت سے جو خلا پیدا ہوا ہے مستقبل قریب میں اس کی بھرپائی کے آثار نظر نہیں آتے ہیں۔وہ میرے ساتھ بہت محبت کرتے تھے جہاں کہیں ملاقات ہوتی ہوتی تو پکار اٹھتے علامہ گڑنگی! کیسے ہیں.

مرحوم بااخلاق، باکردار ،شریف النفس، وخوش مزاج اور ملنسار انسان تھے۔ صبر اور شکر کے وہ پیکر تھے۔ جب بھی کسی سے ملتے مسکراتے ہوئے ملتے۔ نہایت عاجزی اورانکساری کے ساتھ مصافحہ کے لیے ہاتھ بڑھاتے۔بابوشیرازقریشی بڑی خوبیوں کے انسان تھے۔

ان خیالات کا اظہار ممتاز عالم دین مولانا قاضی محمد اسرائیل گڑنگی نے اپنے تعزیتی بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ بابوشیرازقریشی اب ہمارے درمیان نہیں رہے۔ لیکن ان کی یادیں اور باتیں سایہ کی طرح ہمارے ساتھ رہیں گی۔

ہم باشندگان مانسہرہ ان کے انتقال سے بہت افسردہ ہیں۔ اللہ سے دعاء ہے کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو کروٹ کروٹ جنت نصیب عطافرمائے اور لواحقین کو صبرجمیل عطا فرمائے۔

خاص کر ان کے پسماندگان کے ساتھ اللہ تعالیٰ رحم وکرم کا معاملہ فرمائے اور انہیں یہ عظیم صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں