4

شوگران میں چار ہزار سالہ قدیم دیار کا درخت کاٹ دیا گیا

مانسہرہ۔ وادی کاغان کے مشہور سیاحتی مقام شوگران میں چار ہزار سالہ قدیم دیار کا درخت کاٹ دیا گیا، قدیم درخت سیاحوں کے لیے ایک عجوبہ تھا جس کے ساتھ مقامی افراد سیلفیاں بناتے اور قدرت کے لاجواب شاہکار کا نظارہ کرتے تھے۔

مقامی افراد اور معززین کا وزیراعلی خیبرپختونخوا اور جنگلات کے دیگر اعلیٰ حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ، گزشتہ روز معززین علاقہ سید بشارت شاہ، عابد اور دیگر مقامی افراد نے میڈیا کو موقع پر بتایا کہ یہ درخت شوگران آنے والے سیاحوں کی توجہ کا مرکز تھا۔

اور فوٹوز کے شوقین سیاح یہاں آکر تصاویر بنانے کے ساتھ ساتھ قدرت کے اس شاہکار کا نظارہ کرتے تھے،اس قدیم درخت کی تصاویر لاہور آرٹ گیلری کی زینت بھی بنی ہیں مقامی افراد کے مطابق اس طرح کے قدیم درخت جس کو حرف عام میں عجوبہ سمجھا جاتا تھا کو کاٹنے کی انکوائری نہ کرنا یا پھر کاٹنے کی اجازت دینا محکمہ کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

دوسری جانب مقامی افراد جو کہ مالکان جنگلات ہیں انہیں بالن لکڑی جو کے واجب الارض کے قوانین کے مطابق جنگل میں رہائشی مالکان کا اولین حق ہے انہیں وہ بھی نہیں دیا جاتا ان مقامی افراد نے چیف سیکرٹری، سیکرٹری فارسٹ اور وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ سے نوٹس لے کر انکوائری کا مطالبہ کیا ہے۔

اس سلسلہ میں محکمہ جنگلات کا موقف جاننے کےلئے ڈویژنل فارسٹ آفیسر رضوان شاہ رابطہ کرنے کی بارہا کوشش کی گئی تاہم ڈی ایف او مذکورہ کی جانب فون نہ اٹھانے پر ان کا موقف سامنے نہیں آسکا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں