24

ہزارہ یونیورسٹی مانسہرہ کے شعبہ اردو و ہزارہ چیئر کے زیر اہتمام ایک روزہ قومی اردو گوجری کانفرنس

مانسہرہ ۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی سردار شاہجہان یوسف نے کہا ہے کہ پاکستان کی علاقائی زبا نوں کا گلدستہ مجموعی ثقافت کا عکاس ہے،یہ بات انہوں نے ہزارہ یونیورسٹی مانسہرہ کے شعبہ اردو و ہزارہ چیئر کے زیر اہتمام ایک روزہ قومی اردو گوجری کانفرنس کے انعقاد کے موقع بحیثیت مہمان خصوصی شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

سردار شاہجہان یوسف نے کہا کہ گوجری ہزارہ ڈویژن میں بولی جانے والی ایک بڑی زبان ہے اور یونیورسٹی کے اردو ڈیپارٹمنٹ و ہزارہ چیئر کے تحت گوجری زبان کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے حوالے سے قومی کانفرنس کا انعقاد نہایت خوش آئند ہے۔

انہوں نے کہا کہ مختلف علاقائی زبانوں کی ترقی اور ان کے تحفظ کے لئے کام کرتے ہوئے ان کو مربوط بنانا وقت کی ضرورت ہے اور ان اقدامات کے ذریعے ہم معاشرے میں بسنے والی مختلف قومیتوں کے درمیان بھائی چارے اور رواداری کی فضاء قائم کر سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ گوجری سمیت ہزارہ کی دیگر علاقائی زبانوں کی سرپرستی کرتے ہوئے انہیں ملکی و عالمی سطح پر روشناس کروایا جائے اور اس سمت میں کام کرنے کے لئے یونیورسٹی کے ہزارہ چیئر سے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔

سردار شاہجہان یوسف نے یونیورسٹی کی تعمیر و ترقی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اپنے قیام کے فوراً بعد ہزارہ یونیورسٹی کو 2005ء کے تباہ کن زلزلے کا سامنا کرنا پڑا لیکن طلباء و طالبات، پروفیسرز ،فیکلٹی ممبران اور انتظامیہ کے علم دوست رویہ اور آگے بڑھنے کے عزم کی بدولت یونیورسٹی نا صرف اپنے پیروں پر کھڑی ہوگئی بلکہ بین الاقوامی یونیورسٹی کے طور پر سامنے آئی ہے ۔

اور آج ملک بھر سے تعلق رکھنے والے ہزاروں طلباء و طالبات یہاں اپنی تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں جس کے لئے ہزارہ ڈویژن کے عوام ان کے مشکور ہیں۔

یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر اور ڈین نیچرل اینڈ کمپیوٹیشنل سائنسز پروفیسر ڈاکٹر محسن نواز نے شرکاء سے خطاب میں کہا کہ کسی بھی علاقائی زبان کے ساتھ ایک مکمل تہذیب اور ثقافت جڑی ہوتی ہے اور مختلف زبانوں کے امتزاج سے ہم معاشرے میں بھائی چارہ اور رواداری کو فروغ دے سکتے ہیں۔

ڈاکٹر محسن نواز نے مزید کہا کہ ہزارہ چیئر ملک میں لسانی ہم آہنگی اور مختلف علاقائی زبانوں کی ترویج و ترقی کے لئے قابل قدر خدمات سر انجام دے رہی ہے اور گوجری زبان کی ترقی کے لئے آج منعقد ہونے والی کانفرنس اسی سلسلے کی کڑی ہے۔

اس سے قبل یونیورسٹی کے شعبہ اردو کے چیئرمین اور ڈائریکٹر ہزارہ چیئر ڈاکٹر الطاف یوسفزئی نے کانفرنس کے اغراض و مقاصد کے بارے میں شرکاء کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ کانفرنس کا مقصد گوجری زبان سے وابستہ ادبی، ثقافتی و تہذیبی پہلوں کو اجاگر کرنا ہے اور مستقبل میں دیگر علاقائی زبانوں کے فروغ، ترقی اور ان کے تحفظ کے لئے اسی طرح کی صحتمندانہ سرگرمیاں جاری رکھی جائیں گی۔

ڈاکٹر الطاف یوسفزئی نے مزید کہا کہ یونیورسٹی میں لینگویج سنٹر کے قیام سمیت لسانیات میں سرٹیفکیٹ کورسزء کے اجرا ء کے لئے نمل اسلام آباد اور یونیسکو سے بات چیت جاری ہے ۔کانفرنس کے اختتام پر شرکاء میں شیلڈز اور اسناد بھی تقسیم کی گئیں۔

ایک روزہ کانفرنس میں یونیورسٹی کے ڈینز، تعلیمی و انتظامی شعبوں کے افسران اور طلباء و طالبات کے علاوہ تحصیل ناظم بفہ پکھل سردار شاہ خان، ماہرین تعلیم ، لسانیات، سماجی علوم ، شعراء اور ادبی شخصیات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں