26

موزے پہننے سے سردی کے موسم میں پیروں کے مسائل اور ان کا حل

*موزے پہننے سے سردی کے موسم میں پیروں کے مسائل اور ان کا حل*

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ
السَّلامُ عَلَيْكُم ورَحْمَةُ اللهِ وَبَرَكاتُهُ

موزے ہمارے لباس کا ایک اہم جزو ہے۔ خصوصا موسم سرما کی ٹھنڈ میں ان کی اہمیت بڑھ جاتی ہے۔ دن کے اوقات میں تو ہم سبھی موزے پہنتے ہیں۔ تاہم سوتے وقت موزے پہننے کے بارے میں لوگوں کی رائے مختلف ہے۔ خصوصا موسم سرما کی سرد راتوں میں، بعض لوگ موزے کے بغیر سونے کو ترجیح دیتے ہیں اور زیادہ آرام پاتے ہیں۔

جبکہ ایسے لوگوں کی بھی خاصی بڑی تعداد ہے جو موزے پہنے بغیر سو نہیں سکتے۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ کون سا طریقہ صحیح ہے۔ اور جانتے ہیں کہ سوتے وقت موزے پہننے سے کیا نقصان ہوتا ہے اور کیا فوائد ہیں

🪀 *موزے پہن کر سونے کے نقصانات* ۔
موزے پہن کر سونے کے فوائد اور ہمارے جسم کو دوران نیند سکون پہنچانے کے علاوہ اس کے کچھ نقصانات بھی ہو سکتے ہیں اگر ہم جرابیں پہنتے ہوئے مناسب احتیاط نہ کریں تو یہ عمل درج ذیل طریقوں سے نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔

🪀 *دوران خون میں رکاوٹ* ۔
موزے پہننے سے ہمارے پاوں گرم رہتے ہیں جس سے ہمارے دوران خون کو مناسب گردش کا موقع ملتا ہے خصوصا موسم سرما میں ۔ لیکن اگر آپ احتیاط سے کام نہ لیں تو اسکا نقصان بھی ہو سکتا ہے۔ جیسے کہ ٹائٹ جرابیں پہننے کی وجہ سے ہمارے پاؤں کی جانب آکسیجن ملے خون کی گردش مکمل طور پر منقطع ہو سکتی یا کم ہو سکتی ہے۔ جو بعد میں پاؤں کے سن ہونے، پاؤں کی سوجن، اور ویریکوس وینز کے نمودار ہونے کا سبب بن سکتی ہے۔

🪀 *حفظان صحت کے اصولوں کے نظر انداز ہونے کا امکان* ۔
ذیادہ دیر تک موزے پہننے سے پاؤں میں جراثیم اور جرثوموں کے پھلنے پھولنے کا خطرہ پیدا ہو جاتا ہے۔ خصوصا جب زیادہ دیر تک موزے پہنے جائیں اور ان کی صفائی کا خیال نہ رکھا جائے ۔ جس سے پاؤں میں انفیکشن ہونے کا خطرہ بڑھنے کے ساتھ ساتھ پاؤں میں بدبو بھی پیدا ہوتی ہے۔ لہذا موزے بدلنا بہت ضروری ہے اور ایسی جرابیں پہننی چاہیے جس میں ہوا کا گزر ممکن ہو۔موزے

🪀 *پاؤں کے درجہ حرارت میں اضافہ۔*
لوگوں کی ایک بڑی تعداد سوتے ہوئے جرابیں پہننے کو ترجیح دیتی ہے تاکہ پاؤں گرم رہیں ۔ مگر اس کا ایک نقصان پاؤں کے درجہ حرارت کا حد سے زیادہ بڑھ جانے کی صورت میں ہو سکتا ہے جو بعد میں پسینے کے غدود کا سبب زیادہ پسینہ آنے کی صورت میں بن سکتے ہیں ۔ اس عمل سے پاؤں میں پھپھوندی (فنجائی) کی افزائش ہو سکتی ہے جس سے ہمارے پاؤں میں بدبو پیدا ہونے جیسے مسائل جنم لے سکتے ہیں ۔

🪀 *موزے پہن کر سوتے ہوئے احتیاط برتیں* ۔
موزے پہن کر سونے کے لئے ان منفی اثرات سے بچنے اور نیند کے دوران آپ کی صحت کے لئے ان کے فائدہ مند ہونے کے لیے آپ کو کچھ تجاویز پر عمل کرنا چاہیے۔

🪀 *تنگ جرابیں پہننے سے اجتناب کریں* ۔
کاٹن/ سوتی جرابیں پہنیں کیونکہ اس طرح جرابوں میں سے ہوا کا گزر ممکن ہوتا ہے اور ان میں پاؤں کا پسینہ جذب کرنے کی صلاحیت بھی ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ سوتی جرابیں پاؤں کی جلد کو نرمی کا احساس دلاتی ہیں۔

🪀 *روزانہ جرابیں تبدیل کریں* ۔
جرابوں کو روزانہ تبدیل کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ پہننے سے پہلے پاؤں کو اچھی طرح دھوئیں، اور انگلیوں کو اچھی طرح صاف کریں تاکہ موزے پہننے پر کسی بھی پھپھوندی کی موجودگی کو روکا جا سکے جو جلد کے بہت سے مسائل اور ناخوشگوار بو کا باعث بن سکتی ہے۔

🪀 *سردیوں میں ناخن کے فنگس* ۔
پیر کے ناخن کی فنگس سردیوں میں انفیکشن زیادہ عام ہوتا ہے کیونکہ آپ کے ناخن خشک اور ٹوٹ سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ، اگر آپ کے موٹے موزے نمی کو دور نہیں کرتے ہیں، تو آپ کے ناخن پیر کے ناخنوں کے دیگر انفیکشنز کی افزائش کی بنیاد بن جاتے ہیں۔

🪀 *اگر آپ کے پیروں میں درد ہو تو ڈاکٹر کو دکھائیں* ۔
اگر آپ کے پیروں میں درد ہے، اور آپ کے لئے روزمرہ کی کوئی بھی معمول کی سرگرمیاں کرنا مشکل ہوسکتا ہے، تو ورزش کو چھوڑ دیں۔ اور انتظار کئے بغیر اپنی علامات پر بات کرنے کے لیے اپنے معالج کو کال کریں۔

جرابیں دی گئی تجاویز کے مطابق اگر پہنی جائیں تو یہ پاؤں کو گرم رکھنے اور اعضاء میں دوران خون کی صلاحیت بڑھانے میں بھی معاون ثابت ہوتی ہین۔ خصوصا جب حد سے زیادہ سردی ہو تو بہت کارآمد ہوتی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں