17

ہریپور احتجاجی مظاہرہ۔ غریب کیا کھائیں گے بچوں کا پیٹ کیسے بھریں گے

ہری پور آج 15 جنوری بروز اتوار کو شیرانوالہ گیٹ سے احتجاجی ریلی نکالی گئ۔ جو صدیق اکبر چوک میں اختتام پذیر ہو ئ ۔ریلی کے علاوہ دھرنا دیاگیا اور ملٹی میڈیا پر لوگوں کو آگاہی دی گئ ۔جماعت اسلامی کے امیر شہر خالد ریاض اور سابق صدر الخدمت فاؤنڈیشن، ناظم مالیت عبدالرزاق ملک نے کہا کہ ملک کے جو حالات چل رہے ہیں وہ کیا ہورہا ہے ملک کے اندر ایک طوفان برپا ہے۔

جو لوگ دیہاڑی دار ہیں یا چودہ پندرہ ہزار تنخواہ لے رہے ہیں وہ اس میں اپنا آٹا پورا نہیں کر سکتے ہیں۔ وہ کہاں سے اپنے گھریلو اخراجات پورے کریں بچوں کی فیسیں، یوٹیلیٹی بل، گھروں کے کرائے یہ ایک مشکل صورت حال ہے گاڑیوں کے لیے گیس جو ایک سستی چیز تھی۔ وہ انہوں نے بند کر دی ہے سی این جی سٹیشنز کے ملازمین بھی بے روزگار ہو گئے ہیں۔

خوردونوش کی اشیاء آٹا دالیں اور دیگر قیمتوں میں اضافہ ہونے سے عام آدمی کی قوت خرید جواب دے گئی ہے غریب کیا کھائیں گے بچوں کا پیٹ کیسے بھریں گے وہ کہاں سے کھائیں گے۔ آٹے کے سستے پوائنٹس پر ایک جنگ کے حالات نظر آتے ہیں ۔

اس پورے ملک پر ایک مافیا چھایا ہوا ہے یہ مافیا اس ملک کو مسلسل کھائے جارہا ہے پرائز کنٹرول کا کوئی سسٹم نہیں ہے جو مرضی ہے کوئی پوچھنے والا نہیں ہے حکومت کی توجہ ایک دوسرے کو گرانے پر لگی ہوئی ہے ممبران کو خریدنے کے لیے خزانوں کے منہ کھلے ہوئے ہیں۔

ایک ایک بندے کے ساتھ سینکڑوں کی تعداد میں سیکیورٹی لگی ہوئی ہے غریب عوام کی کسی کو کوئی فکر نہیں ہے غریب عوام کی کسی کو کوئی فکر نہیں ہے غریب عوام کو کوئی پیکج دینے کے بجائے اپنی عیاشیوں میں لگے ہوئے ہیں عوام پر ایسے ٹیکسز نہ لگائیں جن سے عوام متاثر ہوتے ہیں معشیت تباہ ہو چکی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں