12

ڈسٹرکٹ یوتھ آفیسر بشریٰ مسرور سیاست کی بھینٹ چڑھ گئی

مانسہرہ ۔ ڈسٹرکٹ یو تھ آفیسر مانسہرہ بشری مسرور سیاست کی بھینٹ چڑھ گئی ۔ ڈسٹرکٹ یوتھ کے رضا کار یو تھ آفیسر کو انتقامی بنیادوں پر ٹرانسفر کرنے کے خلاف سراپا احتجاج ۔

وزیر اعلی خیبر پختون خواہ سے یوتھ آفیسر کا تبادلہ منسوخ کرنے کا پر رزور مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق یو تھ رضا کاروں کا کہنا ہے کہ بشری مسرور نے 01 فروری 2022 کو ڈسٹرکٹ یوتھ آفس مانسہرہ میں بطور ڈسٹرکٹ یوتھ آفیسر عہدہ سنبھالا۔ اس سے پہلے بھی وہ مانسہرہ میں بطور ڈسٹرکٹ آفیسر اپنی خدمات سرانجام دے چکی تھیں۔ بشریٰ مسرور نے پہلے دن ہی ڈسٹرکٹ یوتھ آفس کے تمام رضا کاروں کو آفس بلا کر ان سے تعارفی میٹنگ کی۔ رضا کاروں کے گروپس بنائے اور ان کے ساتھ اپنے مستقبل کے پلانز شیئر کئے ۔ انھوں نے یوتھ آفس کے رضا کاروں کے ساتھ مل کر مختلف ورکشاپس، سیمینارز، اور آگاہی پروگرامز کرائے اور نوجوانوں کے فلاح و بہبود کے لئے ہر ممکن کوشش کی۔

میڈم بشری نے یوتھ آفس کی تمام تر ذمہ داریاں بھر پور طریقے سے سرانجام دی۔ بشریٰ نے تمام تر پروگرامز، ورکشاپس، سیشنز، اور سیمینارز میں یوتھ آفس کے نوجوانوں کو ترجیح دی اور ان کے مشورے کے ساتھ ہی ہر پروگرامز کو مکن بنایا۔

بشریٰ مسرور نے یو تھ آفس کو کسی بھی سیاسی سرگرمی کے لئے استعمال نہیں ہونے دیا اور نہ ہی کسی سیاسی نمائندے کو یو تھ آفس کی سرگرمیوں میں مداخلت کرنے دی ۔ تاہم کچھ سیاسی لوگوں نے ڈسٹرکٹ یوتھ آفیسر میڈم بشری مسرور کی مدت ملازمت مکمل ہونے سے پہلے ہی ڈسٹرکٹ تور غر ان کی ٹرانسفر کروانے میں اہم کردار ادا کیا ۔

جو کے انتہائی افسوس ناک ہے ۔ ڈسٹرکٹ یوتھ آفس کے تمام رضاکار اس فیصلے کی سخت مذمت کرتے ہیں ۔ اور اس کے خلاف ہر فورم پر احتجاج کریں گے رضا کار یوتھ ویلفیئر کی اعلی عہدیداران سے درخواست ہے کہ اس سیاسی دباؤ اور ذاتی عناد پر کیے گئے فیصلے کو واپس لیا جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں