19

24 دن تک سمندر میں بھٹکنے والے شخص کو بچا لیا گیا

ایک ایسے شخص کو زندہ بچالیا گیا جو 3 ہفتے سے زائد عرصے تک سمندر میں بغیر خوراک کے بادبانی کشتی میں بھٹک رہا تھا۔

47 سالہ ایلوس فرانسس کو بحیرہ کیریبین میں کولمبیا کے شہر Puerto Bolívar سے 120 بحری میل دوری پر ایک طیارے نے سمندر میں دیکھا تھا۔

کولمبین بحریہ کی جانب سے جاری ایک بیان کے مطابق ایلوس فرانسس نے کشتی پر لفظ ہیلپ لکھا ہوا تھا جو طیارے نے دیکھ لیا۔

بعد ازاں ایلوس فرانسس نے ایک ویڈیو میں بتایا کہ ‘میرے پاس کھانا نہیں تھا بس ایک کیچپ کی بوتل، ادرک پاؤڈر اور Maggi کشتی میں موجود تھے، تو میں نے ان سب کو پانی میں ملا لیا’۔

کیریبین جزائر کے ایک چھوٹے ملک ڈومینیکا سے تعلق رکھنے والے ایلوس فرانسس نے بتایا کہ انہوں نے اپنی کشتی کی مرمت دسمبر میں سینٹ مارٹن جزیرے کے قریب کی تھی مگر پھر خراب موسم ان کی کشتی کو سمندر میں دور لے گیا۔

انہوں نے بتایا کہ جہاز رانی سے متعلق ناکافی معلومات کے باعث وہ کشتی کو واپس ساحل پر نہیں لے جاسکے اور 24 دن تک سمندر میں بھٹکنے پر مجبور ہوگئے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’24 دن تک زمین کا کوئی ٹکڑا نظر نہیں آیا، کوئی بھی بات کرنے کے لیے نہیں تھا، مجھے سمجھ نہیں آرہا تھا کہ بچنے کے لیے کیا کروں، یہ بھی معلوم نہیں تھا کہ میں کہاں ہوں، وہ بہت مشکل وقت تھا’۔

انہوں نے کہا کہ ‘ایک وقت ایسا بھی آیا جب میری امید ختم ہوگئی تھی’۔

ایلوس فرانسس کو بچائے جانے کے بعد کولمبیا کے شہر Cartagena منتقل کیا گیا جہاں انہیں طبی امداد فراہم کی گئی اور پھر امیگریشن حکام کے حوالے کر دیا گیا تاکہ انہیں وطن واپس بھیجا جاسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں