19

مریض کے ساتھ آئے لواحقین کا وارڈ بوائے پر تشدد کے خلاف کلاس فور ملازمین کا احتجاجی مظاہرہ

مانسہرہ۔ مانسہرہ کنگ عبداللہ ھسپتال سرجریکل وارڈ میں مریض کے ساتھ آئے لواحقین کا وارڈ بوائے پر تشدد کے خلاف کلاس فور ملازمین کا احتجاجی مظاہرہ، وارڈ بوائے پر حملہ کرنے والے ملزمان کی گرفتاری کیلئے سموار تک کی ڈیڈ لائن سموار تک ملزمان کو گرفتار نہ کیا گیا تو پھر ضلع بھر احتجاج و ہڑتال شروع کردیں گئے۔ قاری محمد شفیع

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روزکنگ عبداللہ ھسپتال کے سرجیکل وارڈ میں حاضر ڈیوٹی ڈاکٹر کے سامنے مریضوں کو وارڈ داخلے پر روکنے پر وارڈ بوائے محمد امجد اور ایڈمنٹ مریض کے ورثاء کے درمیان تلخ کلامی ھوئی جسے موقع پر موجود ڈاکٹرز اور مریضوں نے معاملے کو رفع دفع کر دیا ۔

مگر زخمی وارڈ بوائے محمد امجد کے مطابق تھوڑی دیر بعد تین چار افراد نے مجھ پر اچانک حملہ کرکے زخمی کردیا جس پر گزشتہ ہفتہ کے روز کلاس فور ایسوسی ایشن کے صدر قاری محمد شفیع نے حملہ کرنے والے افراد کی عدم گرفتاری کے خلاف احتجاج کیا ۔

صدر کلاس فور سردار قاری محمد شفیع، جنرل سیکرٹری ملک اسد اور سپر وائیزر ندیم خان کلاس فور ایسوسی ایشن کنگ عبداللہ ھسپتال نے احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ھوئے کہا کہ وارڈ بوئے محمد امجد پر حملہ کی پرزور مزمت کرتے ھیں انہوں احتجاج کے دوران وارڈ بوائے پر تشدد کرنے والے نامزد ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ھوئے سموار تک کی ڈیڈ لائن دیتے ھوئے کہا کہ اگر سموار تک نامزد ملزمان کو گرفتار نہ کیا گیا تو ڈاکٹرز،نرسز،پیرامیڈکس،اور دیگر ہسپتال سٹاف کے تعاون سےضلعی بھر میں احتجاجی مظاہرے و ہڑتال کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں